سائفر کیس میں سزا کم دی گئی ہے:سابق اٹارنی جنرل اشتر اوصاف

ماہر قانون اور سابق اٹارنی جنرل اشتر اوصاف کا کہنا ہے کہ سائفر کیس میں سزا کم دی گئی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ سرکاری وکلاء کی تعیناتی کوئی انہونی بات نہیں ہے، جب آپ کا ڈیفنس کونسل آپ کی ہدایت پر معاملات میں تاخیر کرنے کی کوشش کرتا رہے یا خود آپ ایسی کیفیت بنا دیں کہ ٹرائل ممکن نہ ہو تو سرکاری وکلاء کو تعینات کیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وکلاء صفائی ویڈیو لنک کے ذریعے بھی جرح کر سکتےتھے لیکن ایسا بھی نہیں کیا گیا۔

واضح رہے کہ راولپنڈی کی اڈیالہ جیل میں قائم خصوصی عدالت نے سائفر کیس میں بانیٔ پی ٹی آئی اور شاہ محمود قریشی کو 10، 10 سال قیدِ بامشقت کی سزا سنا دی۔