سر درد جان لیوا بھی ثابت ہوسکتا ہے

سر میں درد ہمیشہ خطرناک نہیں ہوتا لیکن کبھی کبھی یہ متاثرہ شخص کو موت کے منہ میں بھی پہنچا سکتا ہے۔ اگر فوری تشخیص کرلی جائے تو ڈاکٹر اس خطرے کو کم کرسکتے ہیں۔

درجہ ذیل ایسی علامات تحریر کی جارہی ہیں جنہیں کسی صورت میں بھی نظرانداز نہیں کرنا چاہیے۔

1) سر میں کچھ سیکنڈز یا منٹ کیلئے ایسا درد اٹھے کہ ناقابلِ برداشت ہو۔

2) جسم کے رُخ تبدیل کرنے پر درد کی شدت میں بدلاؤ آئے۔

3) کھانسی، چھینک یا جسم پر کسی قسم کے دباؤ کے نتیجے میں سر میں درد ہو۔

4) ایسا درد جو ختم نہ ہورہا ہو۔

5) وہ درد جو 50 سال کی عمر گزرنے کے بعد پیدا ہو۔

6) ایسا درد جو بخار، ٹھنڈ، رات میں پسینے یا بلاوجہ وزن میں کمی سے جُڑا ہو۔

7) درد کی شدت میں یا اس کی نوعت میں اتار چڑھاؤ۔

8) سر میں کسی مخصوص مقام پر درد ہونا۔

9) نفسیاتی حالت جیسے دیکھنے کی صلاحیت ، جسم کے ایک حصے کا سُن یا اس میں کمزوری محسوس ہونے یا بولنے کی صلاحیت متاثر ہونے سے درد کا منسلک ہونا۔

10) درد کے وقت آنکھ لال یا اس میں درد ہونا۔

مذکورہ بالا علامات اگر ظاہر ہوں تو فوری طبی امداد حاصل کی جانی چاہیے۔ اس کے علاوہ:

1) دماغی حالت میں تبدیلی سے منسلک درد۔

2) درد کے وقت چہرے کے پٹھے (muscles) متاثر ہونا یا جسمانی رُخ کو تبدیل نہ کرپانا۔

3) مرگی

4) ماضی میں کینسر یا ایڈز کی دفاعی قوت مزاحم ادویات استعمال کرنے والے مریض کو سر میں درد ہونا۔

5) اچانک سے ناقابلِ برداشت درد اُٹھنا۔

ایسی علامات میں فوری 911 پر ایمرجنسی طلب کرنی چاہیے اور خود ڈرائیونگ کرنے سے گریز کرنا چاہیے۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں