ن لیگ اور پی ٹی آئی کو جیت کیلئےکتنی نشتیں درکار؟

ضمنی الیکشن سے قبل پنجاب اسمبلی میں دونوں جانب نمبرز برابر ہو گئے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب ضمنی الیکشن سے پہلے پنجاب اسمبلی میں دونوں جانب نمبرز برابر ہو گئے ہیں، مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی اتحاد کی 173، تحریک انصاف اور ق لیگ اتحاد کی بھی 173 نشستیں ہو گئیں۔

پنجاب اسمبلی میں اس سے پہلے پی ڈی ایم اتحاد کے 176 نمبرز تھے، تاہم پنجاب اسمبلی سے ن لیگ کے 2 ممبران مستعفی ہو گئے جب کہ ایک کو عدالت نے نااہل قرار دے دیا، جس کے باعث ان کے نمبرز کم ہو گئے۔

ن لیگ رکن اسمبلی کو ہائیکورٹ نے جعلی ڈگری پر گزشتہ روز نا اہل قرار دیا تھا، دوسری طرف ن لیگی رکن فیصل نیازی نے گزشتہ روز اور جلیل شرقپوری نے آج اپنی نشست سے استعفیٰ دیا۔

لیگی ایم پی اے جلیل شرقپوری کا استعفیٰ پنجاب میں ضمنی الیکشن کی پولنگ سے چند گھنٹے پہلے نون لیگ کے لیے ایک بڑا دھچکا ہے، اسپیکر پنجاب اسمبلی نے ن لیگی رکن کا استعفیٰ منظور کر لیا ہے، جس سے پی پی 139 شیخوپورہ کی نشست خالی قرار دے دی گئی۔

پی ٹی آئی رہنما شہباز گل کا کہنا ہے کہ ابھی مزید 4 استعفے آئیں گے، جن سے غلطی ہوئی ہے انھیں احساس ہو رہا ہے، بہت جلد منظرنامہ تبدیل ہونے والا ہے۔

واضح رہے کہ یہ ضمنی انتخابات بہت دلچسپ ہیں جس میں حمزہ شہباز کو وزیراعلیٰ برقرار رکھنے کیلئے ن لیگ کی 20 میں سے 9 نشستوں پر کامیابی ضروری ہے۔

خیال رہے کہ 20 مئی کو الیکشن کمیشن نے پنجاب اسمبلی میں حمزہ شہباز کو وزیراعلیٰ کا ووٹ دینے والے تحریک انصاف کے 25 منحرف ارکان کو ڈی سیٹ کردیا تھا۔ڈی سیٹ کیے جانے والے 20 ارکان کی جنرل نشستوں پر ضمنی انتخابات ہو رہے ہیں۔

واضح رہے کہ پنجاب کی حکمرانی کا تاج سر پر سجانے کے لیے سیاسی جماعتوں کے درمیان پنجاب اسمبلی کی فیصلہ کن 20 نشستوں پر ضمنی انتخاب کے لیے پولنگ جاری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں