انڈونیشیا میں 13 طالبات کیساتھ جنسی زیادتی کرنے والے استاد کو عمر قید

جکارتا: انڈونیشیا میں 13 طالبات کو ڈرا دھمکا کر جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے الزام پر ایک اسلامی بورڈنگ اسکول کے سربراہ اور استاد کو عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق انڈونیشیا کے صوبے جاوا کی عدالت نے بورڈنگ اسکول میں غریب طالبات کو 2011 سے 2016 کے درمیان لالچ یا ڈرا دھمکا کر 11 سے 16 سال کی 13 طالبات کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے استاد کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔

شہر بندونگ کے مدنی بورڈنگ اسکول کے 36 سالہ سربراہ اور استاد ہیری ویرامین کے خلاف ایک متاثرہ طالبہ کے والدین نے تھانے میں شکایت درج کرائی تھی جس پر استاد کو حراست میں لے لیا گیا تھا۔ ٹرائل کے دوران ایک درجن طالبات بھی سامنے آگئیں۔
تفتیش کے دوران انکشاف ہوا کہ زیادہ تر طالبات غریب تھیں اور اسکالر شپ پر تعلیم حاصل کر رہی تھیں جب کہ کچھ طالبات حاملہ بھی ہوئیں اور 9 بچوں کو جنم دیا۔

اس ہولناک انکشافات کے بعد عدالت سے درندہ صفت استاد کو جنسی طور پر ناکارہ کرنے کی سزا دینے کی استدعا بھی کی گئی تھی تاہم عدالت نے ملزم کو عمر قید کی سزا سنائی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں